maa chudwai

میں کچھ دنوں سے محسوس کر رہا تھا کے امی بہت اداس ہیں اور کمزور ہیں ایک دن میں فریدہ آنٹی کو چودنے کے بعد گھر آیا توامی رو رہی تھیں میں نے پوچھا تو انہوں نے بولا کہ اکرم انکل انسے ناراض ہیں میں: امی کیوں ہیں آپ سے ناراض وہ امی:بیٹا پچھلے دنوں میں ان کے دوست سے ملی تھیں اس لئے میں: امی کیا آپ نے انسے بھی چدوایا تھا کیا؟ امی:ہاں بیٹا اکرم کو پتہ چل گیا اس لئے ناراض ہے وہ تم کو معلوم ہے کہ اکرم سے میں بہت محبت کرتی ہوں میں اس کے بغیر نہیں رہ سکتی میں:تو امی پھر مت کیا کرو اسکو ناراض پھر امی پھوٹ پھوٹ کر رونے لگی. میں نے ان کو گلے سے لگایا اور دلاسہ دیا پھر اگلے دن میں انکل کے آفس گیا اور انکل سے ملا انکل نے حال احوال پوچھا اور مجھے کافی پلائی پھر مجھ سے آنے کی وجہ پوچھی میں نے انکو بولا انکل کیا ہم ذاتی بات کرسکتے ہیں اکل:ہاں کیوں نہیں میں:انکل آپ امی سے ناراض ہیں کیا؟ انکل: ہاں اور کیا میں صاف صاف بات کرسکتا ہوں ؟ میں: جی بلکل انکل تمھاری ماں میری دوست ہیں اور بہترین دوست مجھے اس سے جو مزہ آیا ہے اپنی بیوی سے بھی نہیں آیا لیکن میں یہ چاہتا ہوں کہ وہ صرف میرے یا تمھارے ابو تک محدود رہے. لیکن وہ آوروں سے بھی کرتی ہے اس لئے میں ناراض ہوں اس سے میں: انکل اگر وہ صرف آپ تک محدود رہنے کا وعدہ کرے تو کیا آپ انسے خوش ہوں گے انکل: ہاں لیکن تمکو کیوں اتنی دلچسپی ہے میں: انکل مجھے اپنی امی سے بہت پیار ہے اورمیں انکی آنکھوں میں آنسو نہیں دیک سکتا انکل: ایک شرط پر میں اب خوش ہوسکتا ہوں میں: وہ کیا؟ انکل: وہ کسی اور سے نہیں چدواہے گی اور تم ہم دونوں کی چدائی سامنے بیٹھ کر دیکھو گے اور میں تمھارے ساتھ جو کروں گا تم منع نہیں کرو گے میں: مجھے منظور ہے تو آپ کب آؤ گے انکل: کل اور میں آنے سے 2 گھنٹے پہلے فون کروں گا میں: ok انکل تھنکس اب میں چلتا ہوں انسے ہاتھ ملاکر میں باہر نکل آیا اور سوچنے لگا کہ مجھے اپنی ماں کے لئے کیا کرنا پڑھ رہا ہے لیکن پھر سوچا امی نے بھی تو میرے لئے اتنا کیا ہے اگلے دن صبح دس بجے انکل نے مجھے فون کیا اور کہا میں چار بجے آؤں گا میں نے امی کو بولا آج آپ کے لئے سرپرائز ہے ایک امی بولی کیا میں بولا ایک بجے سے سٹارٹ کروں گا پھر میں بازار گیا امی کے لئے نئی برا پینٹی اور نیا سوٹ لیا اور کیک بسکٹ لیکر گھر آگیا اور امی کو بولا آپ نہا لیں امی کو باتھ روم میں زبردستی بھیجا جب امی نکلی تواس کے بعد امی کو لیکر پارلر گیا امی کو بولا آج آپ فل میک اپ کریں امی بولی کیوں میں بولا سرپرائز ہے نہ امی بادل نخواستہ چلی گئیں ایک گھنٹے بعد تیار ہوکر آئین تو میں دیکھ کر حیران ہوا امی بہت خوبصورت اور سیکسی لگ رہی تھیں پھر ہم گھر گئے جب تک ٢ بج چکے تھے پھر ہم نے ملکر کھانا کھایا کھانےکے بعد میں امی کو پکڑ کر ان کے روم میں لے گیا امی بولی کیا مسلہ ہے میں بولا امی آج کوئی آرہا ہے آپ کو چودنے کے لئے امی:کون ہے میں :یہی تو سرپرائز ہے امی حیران تھیں میں نے انکی قمیض اتاری پھر شلوار برا اور پینٹی بھی اتاری امی کی چوت کے بال بڑھے ھوے تھے میں نے انکو کرسی پر بتایا اور ہیرریمور کریم لایا اور امی کی جھانٹیں صاف کی امی کی چوت کو تولیہ سے صاف کیا پھر امی کو نئی پینٹی پہنائی پھر برا پھر شلوار قمیض پہنائی انکل نے مجھے کال کی اور بولا میں پانچ منٹ میں پہنچ رہا ہوں میں نے امی کو بولا جلدی سے سامان میرے ساتھ ڈرائنگ روم میں لاؤ ہم نے کیک بسکٹ جلدی سے لے گئے امی نے پوچھا کون ہے وہ میں بولا آنے دو اسکو میری رنڈی ماں آج تیری چوت کو سکون مل جائےگا جب تک دور بل بجی میں بھاگ کر دروازہ کھولا تو انکل تھے وہ امی کے لئے گفٹ لاے تھے میں انکو لیکر ڈرائنگ روم لایا امی نے دیکھا تو ھکی بکی رہ گئیں پھر بھاگ کر انکے گلے سے لگ کر رونے لگی انکل نے بھی معافییاں مانگی میں نے جلدی سے انکے لئے چاۓ بنائی تو انہوں نے بولا بیٹا تم میری گاڑی میں ایک ڈبہ ہے وہ لاؤ میں نے انسے چابی لی اور وہ پیک بھی انکو لاکر دے دیا انہوں نے کھولا تو اس میں شمپین کی بوتل تھی میں سمجھ گیا کہ انکل آج کی شام رنگین بنائیں گے انہوں نے اس کو کھولا اور تین گلاس میں ڈالے اور بولے سب ایک ایک گلاس اتالو امی اور انکل نے اٹھالیا میں بولا میں نہیں پیتا انہوں نے میری بات پر دھیان ہی نہیں دیا کچھ در بعد اس نے امی کو بولا تم میری کیا ہو امی بولی تیری یار انکل:اور کیا ہو امی:تیری رکھیل ہوں میں انکل:اور بولو کیا ہو امی:تیری رنڈی ہوں تیری کتیا ہوں تو میرا ٹوکو ہے انکل نے مجھے دیکھا اور بولا کیا تم نے اپنی ماں کو ننگا دیکھا ہے میں:ہاں بہت بار دیکھا ہے انکل:کبھی خود بھی ننگا کیا ہے میں:ہاں بہت بار انکل:کبھی چودا ہے میں:نہیں کبھی نہیں انکل: آخری بار کب ننگا کیا تھا میں:آج صبح انکل:کیوں؟ میں:اسکی شیو کے لئے انکل نشے میں ٹن ہوچکے تھے اور مجھے اپنے پاس بلایا اور بولا یار تیری ماں مجھے بہت پسند ہے یہ بہت گرم ہے اسکو میں نے بہت چودا ہے لیکن اس سے میرا دل نہیں بھرتا پھر اس نے مجھے بولا کہ میں اس کے کپڑے اتاروں میں نے انکل کی شرٹ اتاری پھر انکی پینٹ پھر بنیان پھر انکا انڈرویر انکا پھنپھناتا لنڈ سانپ کی طرح نکلا پھر انکل بولے امی کو کہ تو بھی ننگی ہوجا امی نے ایک خاص ادا سے اپنا دوپٹہ پھینکا اور بولی جاوید تم اب باہر جاؤ تو انکل نے بولا نہیں جان آج یہ اپنی ماں کو چدتے ھوے دیکھے گا امی چھپ ہوگئی اور اپنی قمیض اتار کر مجھ کو دی پھر برا اور شلوار بھی اتاری پھر اپنی پینٹی بھی اتار دی انکل نے مجھے بھی ننگے ہونے کا بولا میں نے بھی اپنے کپڑے اتار دیے تو اسنے امی کو انکا لنڈ چوسنے کا بولا امی نے انکے کالے لنڈ کو منہ میں لیا میں امی کے چوپے دیکھ رہا تھا پھر انکل نے امی کو ہٹایا اور انکی چوت کو منہ لگایا اور چاٹنے لگے میں فل گرم ہورہا تھا اتنے میں انکل نے امی کی چوت میں اپنا عظیم لنڈ رکھا اور ایک زوردار جھٹکے سے اندر داخل کیا امی کی ہلکی سی چیخ نکلی اووی مر گئی میں اب انکل نے جھٹکے مارنے شروع کئے امی نشے میں بولی چود مجھے زور زور سے میں پاگل ہوں جو آوروں سے چدواتی ہوں میں اب تیری رنڈی بن کر رہوں گی بس انکل بھی بہت تیز چود رہے تھے میرے سامنے میری ماں کو امی کی چوت انکے حملوں کو سہہ رہی پھر اسنے امی کو گھوڑی بنایا اور انکی گانڈ کے سوراخ پر لنڈ رکھا اور آہستہ آہستہ گھسیڑنے لگے آخر انھوں نے پورا لنڈ میری ماں کی گانڈ گھسیڑ دیا اور خوب تیزی سے انکی گانڈ مارنے لگے پانچ منٹ تک گانڈ مارنے کے بعد انہوں نے اپنی منی انکی گانڈ میں ہی نکالی دونو تھک چکے تھے اس کے بعد امی نے انکے لنڈ کو منہ میں لیا اور انکی باقی منی چاٹنے لگی انکل لیٹ گئے امی باتھ روم گئیں امی باتھ روم میں تھیں کہ انکل کا لنڈ پھر سے کھڑا ہوا تو اسنے مجھے بلایا اور بولے جاوید تم نے گانڈ مروائی ہے میں بولا نہیں انہوں نے بولا تم صوفے پر بیٹھو میں جاکر بیٹھ گیا تو انہوں نے میری ٹانگوں کو اٹھایا اور اپنے لنڈ کو تھوک لگایا اور میری گانڈ کو بھی گیلا کیا پھر ایک ہی جھٹکے میں انکا لنڈ میرے اندر چلا گیا مجھے بہت درد ہوا لیکن انہوں نے مجھے پھر چھوڑ دیا اور کپڑے پہن کر روانہ ہو گئے[/size][/size][/size][/color]

No comments:

Post a Comment

LinkWithin

Related Posts Plugin for WordPress, Blogger...

Ratings and Recommendations by outbrain

Powered by Blogger.

Stories on Facebook